News-07-Jun-2017-1

سانحہ ماڈل ٹاؤن استغاثہ کیس سماعت آج انسداد دہشت گردی کی عدالت میں ہو گی

Published : 7th Jun, 2017

پاکستان عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈا پور نے کہا ہے کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن استغاثہ کیس کی سماعت آج انسداد دہشتگردی کی عدالت میں ہو گی ۔سانحہ میں ملوث غیر حاضر پولیس افسران کے وارنٹ گرفتاری جاری کروانے کی استدعا کرینگے۔وہ مرکزی سیکرٹریٹ ماڈل ٹاؤن میں پاکستان عوامی تحریک کے وکلاء سے سانحہ ماڈل ٹاؤن کے قانونی پہلوؤں پر گفتگو کر رہے تھے ۔اس موقع پر نعیم الدین چودھری ایڈووکیٹ ،اشتیاق چوہدھری ایڈووکیٹ ،شکیل ممکا ایڈووکیٹ ،ناصر اقبال ایڈووکیٹ ،یاسر ملک ایڈووکیٹ و دیگر وکلاء موجود تھے ۔خرم نواز گنڈا پور نے کہا کہ مسلسل 9 تاریخوں پر بھی سانحہ ماڈل ٹاؤن میں ملوث پولیس افسران حاضر نہیں ہوئے جبکہ سانحہ کا ماسٹر مائینڈ سابق آئی جی پنجاب سٹے آرڈر کے پیچھے چھپا ہوا ہے ،ایک تصویر پر واویلا کرنیوالے حکمران سانحہ ماڈل ٹاؤن کے 14 معصوم شہریوں کے قاتل ہیں ۔عوامی تحریک کے بے گناہ کارکن 3 سالوں سے تاریخیں بھگت رہے ہیں ۔انہوں نے کہا کہ حکمران پانامہ لیکس سے تو بچ سکتے ہیں لیکن سانحہ ماڈل ٹاؤن میں سزا سے نہیں بچ سکیں گے ،ہم عدالت میں قانونی جنگ لڑ رہے ہیں ،ظلم کی اس کالی رات کا خاتمہ ہو گا ،قاتل اور لٹیرے حکمران جیلوں میں نظر آئینگے ۔ماڈل ٹاؤن کے شہیدوں کا خون رائیگاں نہیں جائیگا ۔انہوں نے کہا کہ موجودہ حکمرانوں کے ہوتے ہوئے سانحہ ماڈل ٹاؤن پر انصاف ملنے کی توقع نہیں ،کیونکہ ماڈل ٹاؤن میں لاشیں گرانے والے حکمران انصاف کے راستے کی سب سے بڑی دیوار ہیں ۔خرم نواز گنڈا پور نے کہا کہ قانون اور عوام کی عدالت میں انصاف کیلئے جنگ لڑتے رہینگے ،انصاف لینے کیلئے آخری حد تک جائینگے۔