News-24-Mar-2017-6

“ظالم اور کرپشن زدہ نظام سے نجات کیلئے قوم کوایک بار پھر اکٹھا ہونا ہو گا”: 23 مارچ کے موقع پرڈاکٹر حسین محی الدین قادری کا خصوصی پیغام

Published : 24th Mar, 2017

لاہور(22 مارچ 2017)تحریک منہاج القرآن انٹرنیشنل کے صدر ڈاکٹر حسین محی الدین نے کہا ہے کہ 23 مارچ 1940 ء کا سیاسی پیغام ’’اکٹھے ہو جاؤ ہے ‘‘ اسلامیان برصغیر جب قائداعظم کی قیادت میں اکٹھے ہوئے تو ملک بن گیا ، آج ظالم اور کرپشن زدہ نظام سے نجات کیلئے قوم کو ایک بار پھر اکٹھا ہونا ہو گا، عوامی تحریک و تحریک منہاج القرآن کے کارکنوں نے 23 مارچ 1940 ء کی قرارداد پاکستان کے مقاصد کے حصول کیلئے جان مال کی قربانیاں دیں ۔ ان خیالات کااظہار انہوں نے منہاج القرآن لاہور کے امیر حافظ غلام فرید کی قیادت میں ملاقات کیلئے آنے والے وفد سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔انہوں نے کہا کہ پاکستان بنانے والی قیادت کی وجہ شہرت ان کی سچائی، ایمانداری ،اپنی قوم سے محبت تھی ،پاکستان بنانے والی قیادت کے لندن ،امریکہ،اسلام آباد، کراچی، لاہور میں کوئی عالیشان محل نہیں تھے ۔بانیان پاکستان اپنے مثالی کردار کے باعث دلوں میں زندہ ہیں، آج کی قیادت رزق حلال کے متعلق پوچھے جانے والے سوالوں کا جواب نہیں دیتی اور پارلیمنٹ میں بھی بے دھڑک جھوٹ بولتی ہے اورقومی مفادات پر ذاتی مفاد کو ترجیح دیتی ہے،جھوٹ بولنے والی مقتدر ایلیٹ قائداعظم کے پاکستان کو کمزورکررہی ہے۔انہوں نے کہا کہ پڑھی لکھی نوجوان نسل کے ٹیلنٹ سے استفادہ اور پاکستان کی تعمیر نو کیلئے زمانہ غار کی جاہل اور کرپٹ سیاسی ایلیٹ سے نجات ضروری ہے، انہوں نے کہا کہ قرارداد پاکستان میں لفظ پاکستان نہیں تھا اسے قرارداد پاکستان کا نام پہلی بار ایک عظیم خاتون بیگم محمد علی جوہر نے دیا ،تاریخی اعتبار سے یہ کہنا درست نہیں کہ انڈین پریس نے پہلی بارقرارداد پاکستان کا نام دیا ۔انہوں نے کہا کہ تحریک پاکستان میں نوجوانوں اور خواتین نے مرکزی کردار ادا کیا مگر افسوس آج یہ دونوں طبقات کرپشن زدہ نظام کے باعث عضو معطل بن کر رہ گئے ہیں۔ 60فیصد نوجوان ڈگریاں ہاتھوں میں لیے بیروزگار ہیں اور خواتین کو ہر سطح پر استحصال ،تشدد اور امتیازی سلوک کا سامنا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ قائداعظم نے برصغیر کے مسلمانوں کو ایک ہی پیغام دیا تھا کہ اپنے حقوق کیلئے اپنے آپ کو منظم کریں ،آج بھی ایسٹ انڈیا کمپنی جیسی سیاسی ذہنیت کے تسلط سے نجات کیلئے ظلم کے شکار طبقات کو اکٹھا اور منظم ہونا ہو گا۔