News - 20 Sep - 2017 - 1

جسٹس باقر نجفی کمیشن رپورٹ پبلک کرنے کی درخواست پر فیصلہ محفوظ

Published : Sep 20, 2017

جسٹس مظاہر اکبر علی نقوی کی عدالت میں جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ پبلک کیے جانے کی شہدائے ماڈل ٹاؤن کی درخواست پرفیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔گزشتہ روز سماعت کے بعد عدالت کے احاطہ میں عوامی تحریک کے سیکرٹری جنرل خرم نواز گنڈا پور نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ جن کے بچے قتل ہوئے وہ وجہ جاننے کا حق رکھتے ہیں، شریف برادران بتائیں انہوں نے ریاست کے 14شہریوں کو کیوں مارا؟اس موقع پر نعیم الدین چوہدری ایڈووکیٹ، اشتیاق چوہدری ایڈووکیٹ،شکیل ممکا ایڈووکیٹ،جواد حامد بھی موجود تھے۔خرم نواز گنڈا پور نے کہا کہ پنجاب حکومت جھوٹ بولتی رہی کہ رپورٹ عدالت نے پبلک کرنی ہے آج سرکاری وکیل نے جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ پبلک نہ کرنے کے حق میں بحث کو طوالت دی، سرکاری وکیل کا کہنا تھا کہ ورثاء نے اس رپورٹ کو لے کر کیا کرنا ہے؟یہ ورثاء کے لیے نہیں ایگزیکٹونے اپنے لئے تیار کروائی۔عوامی تحریک کے وکلاء کا موقف تھا کہ یہ ایک مفاد عامہ سے متعلق معاملہ ہے حقائق جاننا ورثاء کا حق ہے،عوامی تحریک کے وکلاء نے کہا کہ سرکاری وکیل نے درست کہا کہ ہم سے اخلاقیات کی بنیاد پر کوئی سوال نہ کیا جائے قانون کی بات کی جائے،اگر پنجاب حکومت کی کوئی اخلاقیات ہوتی تو اپنے ہی شہریوں کو دن دیہاڑے قتل نہ کرتی۔ خرم نواز گنڈا پور نے کہا کہ جسٹس مظاہر اکبر علی نقوی کے یہ ریمارکس کہ:عدالت اے جی آفس کی ڈکٹیشن پر نہیں چلتی، صرف اللہ کو جواب دہ ہیں یہ درست ہے اللہ کے بعد عدالت ہی مظلوم کا سہارا ہے، انہوں نے کہا کہ امید ہے فیصلہ سے انصاف کا بول بالا ہوگا اور مظلوموں کی داد رسی ہوگی۔شہدائے ماڈل ٹاؤن کے ورثاء بڑی تعداد میں عدالت کے باہر جمع تھے جنہوں نے انصاف کے لیے پلے کارڈ اٹھا رکھے تھے۔