News - 25 Sep - 2017 - 6

شہدائے ماڈل ٹائون کوجسٹس باقر نجفی کمیشن رپورٹ نہ ملنا توہین عدالت ہے: قاضی زاہد حسین

Published : Sep 25, 2017

پاکستان عوامی تحریک کے نو منتخب مرکزی صدر قاضی زاہد حسین نے کہا ہے کہ عدالت کے حکم کے باوجود شہدائے ماڈل ٹائون کو جسٹس باقر نجفی کمیشن رپورٹ نہ ملنا توہین عدالت ہے۔جسٹس باقر جنفی کمیشن رپورٹ لواحقین کا حق ہے اگر ماڈل ٹائون کے قتل عام میں پنجاب حکومت ملوث نہیں تو باقر نجفی رپورٹ کیوں چھپائی جا رہی ہے۔ساری دنیا جانتی ہے پنجاب حکومت سانحہ ماڈل ٹاون کے قتل عام میں برائے راست ملوث ہے اور شہباز شریف،راناء ثناء اللہ ،توقیر شاہ 14شہریوں کے قاتل ہیں ۔ہم حکمرانوں کو بتانا چاہتے ہیں ہم باقر نجفی رپورٹ بھی حاصل کریں گے،ماڈل ٹائون کے قتل عام کا قصاص بھی ہو گا اور ملوث قاتلوں کو پھانسیاں بھی ہونگی کوئی کسی غلط فہمی میں نہ رہے۔ زاہد حسین نے مزید کہا موجودہ نا اہل حکمران ملکی قوانین کو روند کر ریاست میں اپنی بادشاہت چاہتے ہیں مگرپاکستان عوامی تحریک ایسا ہر گز نہیں ہونے دے گی۔بیماریوں کے بہانے کرپٹ خاندان ملک لوٹ کر فرار ہو چکا ہے ۔ایک جھوٹے ،نا اہل،کرپٹ،چور انسان کیلئے آئین میں تبدیلی ظلم ہے یہ آئین پر حملہ ہے الیکشن اصلاحات کے نام پر بل کی شق 203قوم کے ساتھ مذاق ہے جس طرح کے کرپٹ لوگ قوم پر مسلط ہیں ان سے اپنے مفادات کے بل کے علاوہ خیر کی توقع نہیں کی جا سکتی۔قاضی زاہد حسین نے کہا سپریم کورٹ کو الیکشن اصلاھات کے نام پر مذاق پر نو ٹس لینا ہو گا قوم کی نظریں عدالت عظمیٰ پر ہیں۔نا اہل شخص کیلئے اتنی کوششیں غلامی کی نشانی ہیں۔