3

وکلا ءعوا می تحریک کی ڈاکٹر طاہرالقادری کو سانحہ ماڈل ٹاؤن پر تفصیلی بریفنگ

پاکستان عوامی تحریک کے وکلاء نے ڈاکٹر طاہرالقادری کو سانحہ ماڈل ٹاؤن کے حوالے سے  تفصیلی  بریفنگ دی ۔اس موقع پر ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کے مرکزی ملزمان نواز شریف، شہباز شریف اور حکم دینے والے جملہ ملزمان کی طلبی کیلئے بھرپور قانونی چارہ جوئی کی جائے۔ جسٹس باقر نجفی کمیشن کی رپورٹ آنے کے بعد شہباز شریف اور ریاستی مشینری کے استعمال پر کوئی ابہام نہیں رہا ۔ہم اول روز سے کہہ رہے تھے نجفی کمیشن نے اس پر مہر لگادی ۔ کرپٹ، قاتل اور بدعنوان عناصر نے پارلیمنٹ اور جمہوریت کو بے توقیر کیا جن اسمبلیوں پر بد عنوان اور بے گناہوں کے قاتل راج کریں ان پر سلامتی کون بھیجے گا؟17جون 2014 کو ماڈل ٹاؤن لاہور میں کارکنوں نے ظالم نظام کے خلاف خون کے نذرانے دے کر جس انقلاب کی بنیاد رکھی وہ ہر حال میں منطقی انجام تک پہنچے گا ۔کمزور تک جمہوریت کے ثمرات پہنچانے کیلئے اصلاحات ،بے رحم احتساب اور پولیس کے نظام کی تشکیل نو ناگزیر ہے اور اس حوالے سے عوامی تحریک اپنا قومی، سیاسی کردار ادا کرتی رہے گی۔سانحہ ماڈل ٹاؤن کا انصاف اور پولیس کوسیاسی مافیا کے چنگل سے نجات دلوانا سیاسی جدوجہد کا اہم جزو ہے،فوج بیرونی محاذ پر اور پولیس اندرونی محاذ پر سول ڈیفنس ہے مگر پولیس اس لٹیرے نظام میں مافیا کی باڈی گارڈ بنا کر رکھ دی گئی ۔نواز شہباز نے ماڈل ٹاؤن میں پولیس کو اپنے سیاسی مقاصد کیلئے استعمال کر کے اس ادارے کی ساکھ کو نا قابل تلافی نقصان پہنچایااشرافیہ کا یہ مافیا پولیس کو عوام کا خادم ادارہ نہیں بننے دے رہا۔