1

امید ہے مارچ میں سانحہ ماڈل ٹاؤن استغاثہ کیس کے ملزمان پر فرد جرم عائد ہو جائیگی: وکلاء عوامی تحریک

سانحہ ماڈل ٹاؤن استغاثہ کیس میں پولیس ملزمان کے وکلاء کے انسداد دہشتگردی کی عدالت میں تاخیر سے آنے اور گلے کی خرابی کا عذر پیش کر کے بحث کرنے سے معذرت پر فرد جرم عائد نہ ہو سکی، جس پر اے ٹی سی جج نے ناگواری کا اظہار کیا اور کہا کہ اگرتاخیر سے آ کر بحث کی بجائے عذر ہی پیش کرنا تھا تو یہ کام صبح 9بجے بھی ہو سکتا تھا ،صرف اس ایک کیس کیلئے مجھے تین بجے تک بٹھایا جاتا ہے ،کیا میں ملزم ہوں؟مجھے کس بات پر انتظار کروایا جاتا ہے؟ انہوں نے سختی سے ہدایت کی کہ اب ہر حال میں 9بجے کیس کی سماعت ہو گی ،کیس کو آگے بڑھانا ہے۔فرد جرم عائد ہونے کے بعد بھی درخواستوں پر فیصلے ممکن ہیں۔ملزمان کے وکلاء کی طرف سے تاخیر سے آنے پر کیس کی سماعت 2بجے شروع ہوئی جس پر اے ٹی سی جج نے ناگواری کا اظہار کیا۔پولیس ملزمان کے وکیل برہان الدین ایڈووکیٹ نے درخواست دی کہ گلے میں شدید انفیکشن ہے آئندہ تاریخ دی جائے،اے ٹی سی جج نے کہاکہ اگلی تاریخ پر ہر حال میں بحث ہو گی اور 16مارچ کی تاریخ دے دی ۔کمرہ عدالت میں بحث کرتے ہوئے شہدائے ماڈل ٹاؤن کے ورثاء کے وکیل رائے بشیر احمد ایڈووکیٹ نے کہا کہ ہم صبح 9بجے موجود تھے اور ہمیشہ وقت پر آتے ہیں،ہم نے انصاف کے عمل کو آگے بڑھانے کیلئے عدالت سے بھر پور تعاون کیا ہم چاہتے ہیں اس کیس کا فیصلہ بلا تاخیر ہو ،یہ انسانی خون کا معاملہ ہے ،نہ کبھی تاخیری ہتھکنڈے اختیار کئے اور نہ ہی یہ ہمارے مفاد میں ہے۔ سماعت کے بعد میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے رائے بشیر احمد ایڈووکیٹ ،مستغیث جواد حامد ،نعیم الدین چوہدری ایڈووکیٹ،مرکزی سیکرٹری اطلاعات نور اللہ صدیقی اور شکیل ممکا ایڈووکیٹ نے کہاکہ ہماری طرف سے نہیں ملزمان کی طرف سے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس کو التوا کا شکار بنا یا جا رہا ہے ۔اے ٹی سی کے معزز جج ملزمان کے وکلاء کو ہمیشہ وقت پر آنے اور بحث کیلئے کہتے ہیں مگر عمل نہیں ہوتا ہم کسی طور پر بھی تاخیر کے ذمہ دار نہیں ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملزمان کے وکلاء کی اول روز سے یہ خواہش ہے کہ ٹرائل کورٹ کی پرو سیڈنگ رک جائے،کیس التوا کا شکار ہو، ملزمان کے وکلاء ایک سال سے یہ کوشش کر ر ہے ہیں کہ فرد جرم عائد نہ ہو سکے ۔فرد جرم عائد کئے جانے کے حوالے سے جتنے بھی قانونی تقاضے اور عدالتی معاونت کی ضرورت تھی وہ ہم پوری کر چکے ہیں تاخیر دوسری طرف سے ہے ،انہوں نے کہا کہ امید ہے کہ مار چ میں انسداد دہشتگردی کی عدالت کی طرف سے طلب کئے گئے سانحہ کے ملزمان کے خلاف فرد جرم عائد ہو جائیگی۔