4

نواز شریف صرف اس ووٹ کو معزز سمجھتے ہیں جو انہیں ملے:ڈاکٹر طاہر القادری

نااہل کے پاس جیل جانے،بھاگنے یا آرٹیکل 45کے پیچھے چھپنے کے سوا اور کوئی راستہ نہیں

نوازشریف سیکیورٹی رسک ہیں،ان کی اداروں کے خلاف مہم جوئی دشمنوں کا ایجنڈا ہے
شیخ مجیب کے نقش قدم پر چلنے والے اس سیاسی سنپولیے کا اژدھا بننے سے پہلے سر کچلنا ہوگا
ووٹرز نے کسی قدوس بزنجو کے حق میں فیصلہ دیا تو پھر نااہل کیا کرے گا؟سربراہ عوامی تحریک
پی آئی اے،سٹیل ملز سمیت کسی قومی ادارے کی نجکاری کی اجازت موجودہ حکومت کو نہیں ہونی چاہیے

 

پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا ہے کہ نواز شریف کے خلاف دائر کرپشن ریفرنسز پر سزائیں یقینی ہیں ان کے پاس جیل جانے،ملک سے بھاگ جانے یا آئین کے آرٹیکل 45کے پیچھے چھپنے کے سوا اور کوئی راستہ نہیں، نواز شریف صرف اسی ووٹ کو مقدس سمجھتے ہیں جو انہیں ملے، ان کا بس چلے تو وہ یہ ترمیم بھی لے آئیں، وہ گذشتہ روز عوامی تحریک کی سنٹرل کور کمیٹی کے ممبران سے گفتگو کررہے تھے، انہوں نے کہا کہ سینٹ میں کسی جماعت کے پاس اکثریت نہیں تھی چیئرمین الائنس کا ہی آنا تھا،اس حوالے سے حکمرانوں نے بھی الائنس بنانے کی کوشش کی اور اپوزیشن نے بھی،اپوزیشن کا الائنس کامیاب رہا اس پر واویلا کیوں کیا جا رہا ہے؟انہوں نے کہا کہ نااہل کہتا ہے کسی قدوس بزنجو کو وزیر اعظم نہیں بننے دوں گا اگر ووٹرز نے کسی قدوس بزنجو کے حق میں فیصلہ دیا تو پھر نااہل اور اس کی ’’ووٹ کو عزت دو‘‘ مہم کدھر جائے گی؟ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ آمروں کی نرسری میں پرورش پانے والے نااہل کی سوچ شہنشاہوں والی ہے یہ صرف اس جمہوریت سے واقف ہیں جس نے انہیں شہنشاہ بنایا،ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ نوازشریف سیکیورٹی رسک ہیں،ان کی اداروں کے خلاف مہم جوئی دشمنوں کا ایجنڈا ہے،عوام اور اداروں کے درمیان فاصلے پیدا کر کے دشمنوں کو کھل کھیلنے کا موقع دینے کی سازش ہورہی ہے،شیخ مجیب کے نقش قدم پر چلنے والے اس سیاسی سنپولیے کا اژدھا بننے سے پہلے سر کچلنا ہوگا،انہوں نے مزید کہا کہ نااہل کی جماعت اپنی مدت مکمل کرچکی، پی آئی اے یا سٹیل ملز یا کسی قومی ادارے کی نجکاری کرنے کی انہیں اجازت نہیں ہونی چاہیے۔یہ فیصلے آئندہ پارلیمنٹ پر چھوڑے جائیں، انہوں نے کہا کہ ن لیگ کے دور حکومت میں موٹرویز اہم تاریخی عمارات سمیت سب کچھ قرضوں کے لیے گروی رکھ دیا گیا، یہ دو ماہ حکومت چلانے کے لیے پی آئی اے بھی بیچنا چاہتے ہیں،انہوں نے مزید کہا کہ یہ جس ادارے کو بھی بیچتے ہیں وہ اگلے دن پاؤں پر کھڑا ہوتا ہے،اپنی نجی ایئر لائن کو منافع بخش بنانے والے وزیر اعظم پی آئی اے کو خسارے سے نکالنے میں ناکام کیوں ہیں؟